اپنی انا کو زبح کر دو

جس طرح روح جسم کے کثیف پیکر میں اپنی لطافت قائم رکھتی ہے۔ اسی طرح ٹھہرے پانیوں میں کنول کا پھول اپنی پاکیزگی،طہارت اور خوبصورتی برقرار رکھتا ہے،شرط یہ ہے کہ اسے کثیف ،ساکن اور متعفن سطح سے اوپر اٹھنا پڑتا ہے۔اس پاکیزگی اور خوشنمائی کے صدقے جوہڑ کا کوجھ اور بدنمائی بھی کم ہو جاتی ہے۔ ۔۔۔۔ ایک کنول کا پھول انسان کے اندر بھی ہوتا ہے جو خواہشات اور خدشات کے جوہڑ کے پیچوں پیچ اگتا ہے، جو شخص اس ساکن، تعفن زدہ اور کثیف خواہشات،سوچ ،فکر، ذات پات اور تصورات سے اوپر اٹھتا ہے اس کا تن من باغ و بہار ہوجاتا ہے ۔
بزبان سلطان باہو ۔
اندر بوٹی مشک مچایا
جان لیکن پر آئی ہو
ایسے آدمی کے گردوپیش خوش بو، خوبصورتی،اور روشنی رہتی ہے، اگر آپ کے اندر شفاف پانی کے جھرنیں بہتے محسوس ہوتا ہے، اور تمام انسان کسی خلش ،شک و شبہ کے یکساں نظر آتے ہیں تو آپ بھی اس تعفن زدہ معاشرے میں کنول کے پھول ہیں آپ کو مبارک ہو۔
اپنی ذہن ، سوچ ، خیالات، تصورات اور فکر کے ساکن اور تعفن زدہ دائرے سے نکلے، تمام تر فکری غلاظتوں سے نکل کر انسان کو انسان جانئیے۔ اور اپنے وجود کی چنبیلی کے پھول سے اپنی گردو نواح کو مہکائیں، علم اور منطق کو بڑھائیں، ایک دوسرے کے خیر خواہ بنئیے۔ اپنی اندر پنپنے والی حیوانی خواہشات ،اور درندگی کو مارئیے ،اپنی انا کو زبح کئجئے، اپنے اندر موجود نفرت اور ،شر کو علم جدید سے مٹائیں، اور اس جانور کی قربانی کیجیئے جو آپ کو انسان بن سے روکتا ٹوکتا ہے۔
آپ سب کو انا کی قربان عید مبارک ہو ۔
فقط آپکا اپنا
قیزل

عید مبارک

عیدمبارک #اناکیقربانی #قیزل